ابھی کچھ لوگ باقی ہیں جو اُردو بول سکتے ہیں

پاکستانی معاشرہ سیکولر سوچ کے قریب کیوں ہو رہا ہے؟

ہمارا سماج تبدیلی کے عمل سے گزر رہا ہے یہاں روز ایسے واقعات ہوتے ہیں جس میں ظالم اور مظلوم کا فرق واضح ہوتا ہے۔ ان حالات میں اگر ایک طبقہ مسلسل مظلوموں کے حق میں بولے گا اور دوسرا یا خاموش رہے گا یا اگر مگر کی پیچیدگیوں میں الجھا رہے گا تو…

فوجی فاؤنڈیشن ماڈل سکولوں کے اساتذہ کرام کی تنزلی…..یہ 2200 خاندانوں کا مسئلہ ہے۔ اس پر آواز…

بخدمت جناب وزیراعظم پاکستان عمران خان صاحب۔جناب عا لی !پاکستان کے حالات کسی سے ڈھکے چھپے نہیں۔ پاکستان کے عوام رل گئے ہیں۔ ہر ادارہ ان کو ذلیل کرنے پر تلا ہوا ہے۔ عوام کی حثیت کتے جیسے ہو گئی ہے۔ آپ کو لوگوں نے صرف اس لئے سپورٹ کیا کہ آپ…

چند الجھے خیالات

ہماری عقل ایک ایسی مردہ، لاغر اور بےبس کنیز کی طرح ہے جسے جذبات کے گدلے تالاب سے نمودار ہونے والے بدبودار تعصبات کو خوشنما دلائل کا لباس پہنانے کے سوا اور کچھ نہیں آتا۔ جذبوں کی یہ رکھیل نت نئےتجربات سے گزر کراپنے آقا کو خوش رکھنے کے فن میں…

سوشل میڈیا، زینب اور فلاحی ریاست کا خواب

نسل انسانی کے تاریخی سفر پر نظر دوڑائیں تو یہ بادشاہوں، وزرا، جرنیلوں، درباریوں اور جاگیرداروں کی کہانیوں پر مبنی ایک ضخیم کتاب دکھائی دیتی ہے۔ اس میں اشرافیہ کی سخاوت کے قصے ، جرنیلوں کی فتوحات کے تذکرے ، درباری سازشوں کے احوال اور…

جمہوریت، سیکولرازم اورالہامی احکامات۔ ایک تجزیہ

جمہوریت کا سادہ سا مفہوم یہ ہے کہ ایک ملک کے شہری مل کر حکومت تشکیل دیتے ہیں جومعاشرے میں نظم وضبط قائم کرنے کے لئے قوانین مرتب کرتی ہے اور ان کا نفاذ یقینی بناتی ہے۔ کونسا قانون بنانا ہے اور کونسا نہیں بنانا، اس کا فیصلہ اکثریت سے ہوتا ہے…

عشق و محبت کے بارے میں چند منتشر خیالات۔

جب ہم پہلی بار کسی کی محبت میں گرفتار ہوتے ہیں تو ہزاروں اچھوتے اور انوکھے جذبے ہمارے دل کی ویران دھرتی پر خوشبودار پھول اگانے لگتے ہیں۔ ایک اجنبی کائنات کا در وا ہوتا ہے اور احساسات کی روشنیوں سے قلب کا آئینہ چکاچوند ہو جاتا ہے، ایک ایسی…

فرد کی آزادی، ڈونلڈ ٹرمپ اور مغرب کا زوال

فرد خود ہی سماج اور اس کے ادارے تخلیق کرتا ہے اور پھر انہی سے برسرپیکار ہو جاتا ہے۔ فرد اور سماج کی یہ کشمکش انسانی تاریخ کے ایک ایک صفحے پر رقم ہے۔ اس کشمکش میں فرد کا پلڑا بھاری ہو جائے تو اس کے اندر موجود تخلیقیت کا جوالا مکھی ابل پڑتا…

وحی، عقل اور عصری مسائل کا حل

صدیوں سے قرآن پاک کی تفاسیر لکھی جا رہی ہیں۔ ہرمفسر اس مقدس کتاب کو اپنی عقل کی روشنی میں سمجھنے کی کوشش کرتا ہے۔ انفرادی فہم کے نقوش ہر نئی کاوش پر واضح طور پر نظر آتے ہیں۔ ہر کسی کی تفہیم کا زاویہ دوسروں سے مختلف ہے اور یہ فطری بات ہے…